ملک میں اسلامی صدارتی نظام کے نفاذ کی درخواست خارج

1 min read

Sharing is caring!


اسلام آباد : سپریم کورٹ نے ملک میں اسلامی صدارتی نظام کے نفاذ کی درخواست خارج کردی، چیف جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے ریمارکس دیئے آرٹیکل 227 کے مطابق کوئی قانون قرآن و سنت کے منافی نہیں بن سکتا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے ملک میں اسلامی صدارتی نظام کے نفاذ کی درخواست خارج کردی، درخواست گزار نے کہا کہ پاکستان میں اسلامی صدارتی نظام کانفاذ چاہتے ہیں۔

جس پر چیف جسٹس نے درخواست گزار سے مکالمے میں کہا کہ ہم بھی اسلامی نظام چاہتے ہیں،پاکستان میں پارلیمانی نظام حکومت ہے، آپ ایسا کریں پاکستان کا آئین پڑھیں، دستور کی کتاب کارنگ بھی سبز ہے۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ آئین کا آغاز اللہ کے ذکر سے ہوتا ہے،قرآن پاک کا آئین میں ذکر ہے، آرٹیکل 227کےمطابق کوئی قانون قرآن و سنت کے منافی نہیں بن سکتا۔

چیف جسٹس نے درخواست گزار سے استفسار کیا کہ کیا آپ کو ان باتوں سے اختلاف ہے، کیا آپ صدارتی نظام میں صدر بننا چاہتے ہیں، آپ کیوں تمام اختیارات فرد واحد کو دینے کیلئے صدارتی نظام چاہتے ہیں، آپ جوپڑھ رہیں وہ وہ آئین پاکستان نہیں۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ مجھےآئین پاکستان کا مطالعہ کرنے کی مہلت دے دیں، جس پر چیف جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہا کہ ہم یہ درخواست خارج کر دیتےہیں، آپ آئین پڑھ لیں پھر اگر آپ کو لگے تو نئی درخواست دائر کر دیجیے گا۔

Comments





Source link

Oval@3x 2

Don’t miss latest news!

Select list(s):

We don’t spam! Read our [link]privacy policy[/link] for more info.

🕶 Relax!

Put your feet up and let us do the hard work for you. Sign up to receive our latest news directly in your inbox.

Select Your Choice:

We’ll never send you spam or share your email address.
Find out more in our Privacy Policy.

🕶 Relax!

Put your feet up and let us do the hard work for you. Sign up to receive our latest news directly in your inbox.

Select Your Choice:

We’ll never send you spam or share your email address.
Find out more in our Privacy Policy.

Sharing is caring!

Read More :-  شہباز شریف 28 مئی تک مسلم لیگ ن کے قائم مقام صدر نامزد

You May Also Like

More From Author